Latest Posts
رسول اللہ ﷺ کا فرمانمنیر احمد ولد سردار محمدملک بھر میں واٹس ایپ سروسز متاثر، صارفین پریشانجرمن سفیر کی دفتر خارجہ طلبی، قونصل خانے پر حملے کی مذمتای پیپرزرسول اللہ ﷺ کا فرمانگارلک اور چیز بریڈانڈیا کے زیرِ انتظام کشمیر میں انتخابی مہم سے پاکستان کا تذکرہ غائب کیوں ہوا؟صنم جاوید کیس میں اپیل سے متعلق وزیراعلیٰ پنجاب کے دفتر کی وضاحتصبا فیصل اپنی بیٹی کے ہمراہ عُمرے پر روانہمخصوص نشستوں کے فیصلے کیخلاف نظر ثانی درخواست تعطیلات کے بعد سننے کا فیصلہایران جوہری بم بنانے کی صلاحیت سے ایک یا دو ہفتے دور ہے، امریکابنگلادیش میں احتجاجی طلبہ کو دیکھتے ہی گولی مارنے کا حکمکراچی: ہوٹل کے ملازم پر ناشتے کے پیسے مانگنے پر مقدمہ درج کرنے والے پولیس اہلکار معطلنئے انتخابات کیلیے پی ٹی آئی پختونخوا اسمبلی کی تحلیل اور قومی نشستیں چھوڑنے پر تیار ہے، فضل الرحمانحکومت میں بیٹھے آئی پی پیز مالکان عوام کا خون نچوڑ رہے ہیں، حافظ نعیم الرحمٰنکراچی میں 6 سالہ بچی سے پڑوسی کی زیادتی، ملزم گرفتارکراچی ڈویژن میں دو لاکھ گھروں میں کھانا پکانے کیلئے لکڑی کا استعمال ہوتا ہے، ادارہ شماریاتوفاق نے بنوں واقعے کی تحقیقات کیلیے پختونخوا حکومت کے کمیشن کو مسترد کردیاپیام شوق و سلام عقیدت

سعودی عرب: 47 سالہ ٹیچر کو سوشل میڈیا پوسٹ پر 20 سال قید کی سزا

جدہ: سعودی عرب کی ایک انسداد دہشت گردی عدالت نے 47 سالہ استاد کو سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر تنقیدی پوسٹ کی بنیاد پر 20 سال قید کی سزا سنادی۔ ہیومن رائٹس واچ کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کی اسپیشلائزڈ کریمنل کورٹ انسداد دہشت گردی ٹریبیونل نے 47 سالہ اسعد الغامدی کو آن لائن پیغامات میں کئی جرائم کا مرتکب قرار دیتے ہوئے سزا سنائی ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ سعودی سیکیورٹی فورسز نے اسعد الغامدی کو 20 نومبر 2022 کو جدہ کے قریب واقع الحمدانیہ میں واقع ان کے گھر پر رات کے وقت چھاپے کے دوران گرفتار کرلیا تھا جبکہ ان کی اہلیہ اور بچوں نے ہیومن رائٹس واچ کو اس حوالے سے آگاہ کردیا تھا۔ سیکیورٹی فورسز نے الیکٹرونک ڈیوائسز قبضے میں لیا تھا اور پورے گھر کی تلاشی لی تھی اور انہیں گرفتاری وجہ یا ان کے خلاف درج کسی مقدمے کے بارے میں آگاہ نہیں کیا گیا تھا۔ ہیومن رائٹس واچ نے کہا کہ اسعد الغامدی کو 29 مئی 2024 کو سزا سنائی تھی۔ سعودی عرب میں محقق جوئے شیا نے بتایا کہ سعودی عدالتیں عام شہریوں کو آن لائن پرامن اظہار رائے پر دہائیوں پر مشتمل سزائیں سنا رہی ہیں، حکومت کو بیرون ملک موجود ناقدین کے اہل خانہ کو تنگ کرنا بند کردینا چاہیے۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ ان کے ایک بھائی محمد الغامدی کو بھی ایکس پر پوسٹس اور یوٹیوب میں جاری سرگرمیوں کی وجہ سے جولائی 2023 میں سزائے موت سنائی گئی تھی، اسی طرح ان کے ایک اور بھائی سعودی حکومت پر تنقید کے لیے مشہور اسلامی اسکالر سعید بن نصیر الٖغامدی جلاوطن ہیں اور برطانیہ میں مقیم ہیں۔ ہیومن رائٹس واچ کی رپورٹ میں بتایا گیا کہ برطانیہ میں جلاوطن ان کے بھائی اکثر سعودی حکام اور ان کے اقدامات پر تنقید کرتے ہیں اور سعودی حکام بیرون ملک موجود افراد کے اہل خانہ کو ردعمل کے طور پر نشانہ بناتے ہیں۔

About aljazeera news hd

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Powered by Dragonballsuper Youtube Download animeshow